بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 محرم 1446ھ 16 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

زمدا اور ذمدا نام رکھنا کیسا ہے؟


سوال

مجھے ایک نام کے بارے میں پوچھنا تھا کہ بچی کا نام رکھنا کیسا ہے؟:  زمدا، زمدہ، ذمدا، اور ذمدہ، ان چار ناموں میں سے جو نام، اور تلفظ درست ہے اس کا معنی کے ساتھ جواب دے دیں۔

جواب

صورت مسئولہ میں "زمدا"، یا"ذمدا" بے معنی الفاظ ہیں، لہذا کوئی  اور معنی دار نام کا انتخاب کریں ۔ہمارے جامعہ کی ویب سیٹ پر  لڑکیوں کی اسلامی نام موجود ہیں اس سے استفادہ کریں۔

لنک: https://www.banuri.edu.pk/islamic-name/?cat=Larkiyon-k-Mana-k-Aytibar-se-Achay-Naam

فتاوی شامی میں ہے: 

"التسمية ‌باسم لم يذكره الله تعالى في عبادة ولا ذكره رسوله صلى الله عليه وسلم ولا يستعمله المسلمون تكلموا فيه، والأولى أن لا يفعل"

.(كتاب الحضر والاباحة، ج6، ص417، ایچ ایم سعید)

ایضا فیہ: 

"وكان رسول الله صلى الله عليه وسلم يغير الاسم القبيح إلى الحسن جاءه رجل يسمى أصرم فسماه زرعة وجاءه آخر اسمه المضطجع فسماه المنبعث، وكان لعمر رضي الله عنه بنت تسمى عاصية فسماها جميلة» ، ولا يسمى الغلام يسارا ولا رباحا ولا نجاحا ولا بأفلح ولا بركة فليس من المرضي أن يقول الإنسان عندك بركة فتقول لا، وكذا سائر الأسماء، ولا يسميه حكيما، ولا أبا الحكم ولا أبا عيسى ولا عبد فلان ولا يسميه بما فيه تزكية نحو الرشيد والأمين فصول العلامي. أي لأن الحكم من أسمائه تعالى فلا يليق إضافة الأب إليه أو إلى عيسى"

.(فتاوى الشامي، كتاب الحضر والاباحة، ج6، ص418)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144508101801

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں