بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

7 شوال 1441ھ- 30 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

بیوی کو چھ طلاقیں دے دیں


سوال

ایک آدمی نے اپنی بیوی کو  6 طلاق ایک ہی مرتبہ دے دیں جب کہ اور کوئی  موجود نہیں تھا، صرف اس کی بیوی تھی جس نے یہ الفاظ سنے. تو کیا اب طلاق ہوگی کہ نہیں؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں چھ طلاقیں دیں تو ان میں سے  تین طلاقوں سے ہی مذکورہ شخص کی بیوی اس پر حرمتِ مغلظہ کے ساتھ حرام ہوگئی، رجوع یا تجدیدِ نکاح جائز نہیں ہے۔

واضح رہے کہ تین طلاقیں ایک ساتھ دینا گناہ ہے، تاہم ایک ساتھ تین طلاقیں دینے سے بھی تین طلاقیں واقع ہوجاتی ہیں، اور مزید تین طلاقیں اس کے سر اضافی گناہ ہیں، اسے توبہ و استغفار کرنا چاہیے۔ فقط واللہ اعلم

طلاق دینے کے طریقے اور تین طلاق کے حکم کی تفصیل کے لیے درج ذیل لنکس پر دو فتوے ملاحظہ کیجیے:

طلاق دینے کا طریقہ

تین طلاق ایک مجلس میں دینا


فتوی نمبر : 144108201208

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے