بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

23 ربیع الثانی 1443ھ 29 نومبر 2021 ء

دارالافتاء

 

اعتکاف کی حالت میں سگریٹ پینے کا حکم


سوال

اعتکاف میں سگریٹ پی سکتے ہیں؟ سگریٹ پینے سے اعتکاف پر کوئی اثر ہو گا؟

جواب

واضح رہے کہ مسجد کو بدبو دار چیزوں سے پاک رکھنے کا حکم ہے اور اعتکاف مسجد میں کیا جاتا ہے، لہٰذا معتکف کے لیے مسجد کے اندر سگریٹ پینا مکروہ ہے، اور اگر معتکف سگریٹ پینے کے لیے مسجد سے باہر جائے گا تو اس کا اعتکاف فاسد ہوجائے گا، نیز اگر کوئی معتکف قضائے حاجت کے لیے بیت الخلا جائے اور وہاں سگریٹ پیے تو یہ بھی مکروہ ہے، لوگوں کی تکلیف کا باعث ہے، البتہ اگر معتکف نے قضائے حاجت کے دوران ہی سگریٹ پی لی اور سگریٹ پینے کے لیے اضافی وقت نہیں لگایا تو اس سے اعتکاف فاسد نہیں ہوگا، لیکن اس کا یہ عمل مکروہ ہوگا۔ اور اگر معتکف روزہ کی حالت میں سگریٹ پیے گا تو روزہ اور اعتکاف دونوں فاسد ہوجائیں گے، بعد میں ان دونوں کی قضا لازم ہوگی۔

سگریٹ پینے کے حوالہ سے درج ذیل فتویٰ ملاحظہ کیجیے:

کیا سگریٹ پینا حرام ہے؟

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144209201823

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں