بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

11 رجب 1444ھ 03 فروری 2023 ء

دارالافتاء

 

نامحرم لڑکے اور لڑکی کا پیار کرنا اورآپس میں باتیں کرنا


سوال

ایک لڑکا اور لڑکی دونوں آپس میں پیار کرتے ہیں، کیا دونوں آپس میں باتیں کرسکتے ہیں؟

جواب

اجنبی لڑکے اور لڑکی کا  ایک دوسرے کے ساتھ پیار کرنا اوردونوں کا ملاقات  اور گفتگو کرنا  سب حرام اور باعثِ گناہ عمل ہے۔

صحیح مسلم میں ہے:

"عن ‌أبي هريرة عن النبي صلى الله عليه وسلم قال: « كتب على ابن آدم ‌نصيبه ‌من ‌الزنا مدرك ذلك لا محالة، فالعينان زناهما النظر، والأذنان زناهما الاستماع، واللسان زناه الكلام."

(كتاب القدر، باب قدر على إبن آدم حظه من الزنا وغيره، ج:8، ص:52، ط:دارالطباعة العامرة تركيا)

مشکاۃ المفاتیح میں ہے:

"وعن الحسن مرسلا قال: بلغني أن رسول صلى الله عليه وسلم قال: «‌لعن ‌الله ‌الناظر والمنظور إليه."

(كتاب النكاح، ‌‌باب النظر إلى المخطوبة وبيان العورات، الفصل الثالث، ج:2، ص:991، ط:المكتب الإسلامي - بيروت)

فتاوی شامی میں ہے:

"وفي الشرنبلالية معزيا للجوهرة: ولا يكلم الأجنبية ‌إلا ‌عجوزا عطست أو سلمت فيشمتها لا يرد السلام عليها وإلا لا انتهى."

(كتاب الحظر والإباحة، ‌‌فصل في النظر والمس، ج:6، ص:369، ط:سعيد)

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144405100080

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں