بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 محرم 1446ھ 15 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

ام عاطرہ نام رکھنا


سوال

میں نے اپنی بیٹی کا نام ’’ام عاطرہ‘‘ رکھا ہے ، اس کے معنی کیا ہیں؟کیا یہ نام رکھنا درست ہے؟

جواب

"ام عاطرہ" دو لفظوں سے مرکب ہے "ام" اور "عاطرہ"۔ "عاطرہ" کا معنی خوشبو دار عورت اور "ام " کا معنی ماں کے ہیں۔ "ام عاطرہ" کا معنی خوشبو والی عورت کی ماں۔

لہذا یہ نام رکھنا درست ہے، البتہ بہتر اور اچھا یہ ہے کہ صحابیات میں سے کسی نام کا انتخاب کیا جائے۔سائل کے لیے اگر نام تبدیل کرنا ممکن ہے تو پھر تبدیل کرلے اور صحابیات میں سے کسی نام کا انتخاب کرلے۔

قاموس الوحید میں ہے:

"عطر عطرا: خوشبو دار ہونا۔"

(ص نمبر ۱۰۹۳، ادارۃ الاسلامیات)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144508102094

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں