بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 شوال 1441ھ- 01 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

ULOAN سروس اوراس کا حکم


سوال

کیا فرماتے ہیں علماء کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ آجکل عموما جب لوگوں کے پاس موبائل میں بیلنس ختم ہو جاے تو وہ کمپنی کی طرف سے۱۵روپے لون منگواتے ہیں جس کی کٹوتی میں کمپنی ۶۰پیسے زائد چارج کرتی ہے اب پوچھنا یہ یے کہ کمپنی جو زائد پیسے بطورٹکس چارج کرتی ہے۔ تو کیایہ زائد پیسے سود میں آتے ہیں کہ نہیں؟

جواب

آپ کے سوال کا جواب دیا جاچکا ہے براہ کرم اس لنک پر جاکے اپنا مطلوبہ سوال پڑھ لیں۔ http://baui.edu.pk/u/ode/914


فتوی نمبر : 143101200578

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے