بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

19 شعبان 1445ھ 01 مارچ 2024 ء

دارالافتاء

 

تین گواہوں کی موجودگی میں نکاح


سوال

میرا نکاح تین گواہوں کی موجودگی میں میرے ایک دوست نے اسلامی طریقے سے پڑھایا۔ کیا میرا نکاح ہوگیا؟ یا نکاح کے لیے نکاح خواں کا ہونا لازمی ہے؟

جواب

نکاح کے منعقد ہونے کے لیے شرط یہ ہے کہ دو عاقل بالغ مرد یا ایک مرد اور دو عورتوں کی موجودگی میں ایجاب و قبول ہو،   قانونی طور پر رجسٹرڈ نکاح خواں نہ بھی ہو تب بھی نکاح ہو جائے گا۔

لہذا مذکورہ صورت میں جب گواہوں کی موجودگی میں شرعی طریقے سے ایجاب و قبول  کیا گیا تو نکاح منعقد ہوگیا۔  لیکن گھر والوں سے چھپ کر نکاح کرنا شرعاً سخت ناپسندیدہ  اور  معاشرتی اقدار کے لیے سخت ضرررساں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107200401

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں