بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 شعبان 1445ھ 23 فروری 2024 ء

دارالافتاء

 

تجارت میں نفع ونقصان کے دونوں پہلو ہوتے ہیں کبھی نفع کبھی نقصان


سوال

 جس کاروبار میں نقصان نہ ہو کیاوہ جائز ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں تجارت کرنے میں نفع ونقصان دونوں کا امکان ہوتا ہے، یہ لازمی نہیں ہے کہ ضرور نقصان ہو، بہرحال اگر کسی کو کاروبار میں نقصان نہیں ہوا نفع ہی ہو رہا (بشرطیکہ وہ کاروبار جائز ہو) تو اسے اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کرنا چاہیے کہ اللہ تعالیٰ نے اسے نقصان سے بچایا ہے، لہذا جو نفع ہو گا وہ اس کے لیے جائز ہے۔

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144312100259

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں