بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

20 صفر 1443ھ 28 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

تین طلاق کے بعد بیوی کو ساتھ رکھنے والے کے ساتھ قطع تعلقی کا حکم


سوال

تین طلاق دینے کے بعد بیوی کو رکھنے والے کے ساتھ قطع تعلق کا حکم ؟

جواب

تین طلاقیں دینے کے باوجودمطلقہ  بیوی کو ساتھ رکھناسخت گناہ اورحرام ہے اور چاروں مذاہب کے متفقہ فیصلہ کے  خلاف ہے۔مطلقہ ثلاثہ کو اپنے پاس رکھنے والاشخص حرام کاری کامرتکب ہے، اور ایسے لوگ جو علانیہ گناہوں کاارتکاب کرنے والے ہوں اوراپنے عمل سے باز نہ آتے ہوں ان سے میل جول،بات چیت ترک کردیناشریعت میں ثابت ہے،  لہذا   ایسے شخص کوراہِ راست پر لانے اور دیگر لوگوں کی عبرت کے لیے کے لیے ہر ممکن طریقہ اختیارکرناچاہیے،سمجھانے کے باوجودایساشخص جب تک باز نہیں آتااور علیحدگی اختیار نہیں کرتا ، اس  کی اصلاح کی غرض سے اس سے میل جول  اور تعلقات ختم کردینےچاہییں۔

فتح الباری میں ہے:

"( قوله: باب ما يجوز من الهجران لمن عصى )

 أراد بهذه الترجمة بيان الهجران الجائز لأن عموم النهي مخصوص بمن لم يكن لهجره سبب مشروع فتبين هنا السبب المسوغ للهجر وهو لمن صدرت منه معصية فيسوغ لمن اطلع عليها منه هجره عليها ليكف عنها."

(فتح الباری،10/497،ط:دارالمعرفۃ بیروت)

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144211200237

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں