بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 شوال 1441ھ- 28 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

تصویر والی شرٹ میں نماز کا حکم


سوال

بعض لوگ ایسی شرٹ پہنتے ہیں جس میں گھوڑے نما تصویر ہوتی ہے، لیکن اس کی شکل نمایاں نہیں ہوتی،  ایسی تصویر کےساتھ نماز پڑھی تو نماز ہوجائے گی یا نہیں؟

جواب

اگر شرٹ پر کسی جان دار کی تصویر ہو تو ایسے کپڑے میں نماز پڑھنا مکروہ ہے، البتہ  اگر وہ تصویر مٹادی جائے یا چھپالی جائے یا اس کا چہرہ مکمل کاٹ دیا جائے یا  تصویر بہت چھوٹی ہو کہ (اگر اسے زمین پر رکھ کر کھڑے ہونے والا دیکھے تو) سمجھ نہ آتی ہو  یا اس پر سیاہی مل دی جائے تو  پھر نماز میں کراہت نہیں ہوگی، لیکن صرف آنکھیں مٹانے سے وہ تصویر کے حکم سے نہیں نکلے گی۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107201228

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے