بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 جُمادى الأولى 1444ھ 04 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

ترکہ کی تقسیم بیوہ 4 بیٹیاں 2 بھائی


سوال

ایک  شخص فوت ہو گیا، اس کے نام  ایک دوکان ہے،  جس کی  ما لیت  40  لاکھ روپے ہے،  وارثین میں ایک بیوہ ہے اور 4 بیٹياں ہیں،  بیوہ کا کوئی بیٹا نہیں ہے اور بیٹییوں کے  ایک  تایا جان اور  ایک چچا ہیں، کس کس کو کتنی رقم ملے گی ؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں مرحوم کے کل ترکہ کو 48 حصوں میں  تقسیم کرکے، 6 حصے بیوہ کو، 8 حصے مرحوم کی ہر ایک بیٹی کو، اور 5 حصے مرحوم کے ہر ایک بھائی کو ملیں گے۔

یعنی 40 لاکھ روپے میں سے 500000 روپے بیوہ کو، 6,66,666روپے 66 پیسے مرحوم کی ہر ایک بیٹی کو، اور 4,16,666 روپے 66 پیسے مرحوم کے ہر ایک بھائی کو ملیں گے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144210200264

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں