بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 ذو الحجة 1445ھ 22 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

تقویٰ نام رکھنا


سوال

میری بیٹی کا نام ”تقویٰ“ ہے، کیا نام رکھنا جائز ہے؟ برائے مہربانی اس کا معنیٰ بھی بتائیں، میری بیٹی کے اندر خوف اور ڈر رہتا ہے۔


جواب

"تقویٰ"  کے لغوی  معنی ہیں : ڈرنا ،  بچنا،اور پارسائی،  یعنی کسی ایسی چیز سے بچنا جس سے نقصان کا اندیشہ ہو۔ اس معنی کے اعتبار سے یہ نام رکھنا جائز ہے۔ البتہ "تقوی"  اپنے  اصطلاحی اور مفہومی لحاظ سے شریعت کی ایک اصطلاح ہے،  اور ناموں کے لیے اس کا استعمال نہیں ہے، اس لیے بہتر یہ ہے بچی کا نام صحابیات، تابعات  ، نیک مسلمان خواتین کے ناموں پر یا اچھے بامعنی نام پر رکھے جائیں۔

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144410101420

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں