بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو الحجة 1445ھ 21 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

سوتے وقت وضو کا حکم


سوال

رسول ﷺ نے فرمایا رات کو باوضو ہو کر سویا کرو   ، کیا نماز عشاء کے وضو کے ساتھ سو سکتے ہیں یا پھر  سونے کے لیے نیا وضو کرنا ضروری ہے؟

جواب

 نئے وضو کی ضرورت نہیں ، صرف  وضو کا ہونا  مسنون ہے چاہے عشاء کی   نماز کا ہو یا پھر عشاء کے نماز کے بعد دوبا رہ وضو  کیا ہو۔

شرح المسلم النووی میں ہے:

"56 :(2710)   إذا أخذت مضجعك فتوضأ وضو ءك للصلاة ثم إضطجع علی شقك الأیمن   .

(إحداھا):الوضوء عند إرادة النوم فإن کان متوضأ  کفاه ذالك الوضوء لأن المقصود النوم علي طھارة مخافة أن یموت فی لیلته و لیکون أصدق لرویاہ وأبعد من تلعب الشیطان به فی منامه و ترویعه إیاه."

(شرح المسلم للنووي، کتاب الذکر و الدعاء والتوبة والإستعفار، باب الدعاء و النوم،  ج:17  ص:27  ط: دار الکتب العلمیة)
فقط و اللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144408101089

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں