بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 رجب 1444ھ 31 جنوری 2023 ء

دارالافتاء

 

صرف فلم دیکھنے سے روزہ نہیں ٹوٹتا


سوال

کیا فحش فلمیں دیکھنے سے روزہ ٹوٹتا ہے؟

جواب

واضح رہے کہ جاندار اشیاء کی فلم بینی مطلقاً ناجائز ہے، اگر فحش ہو تو دوہرا گناہ ہے، اور رمضان میں ہو تو کئی گناہوں کا مجموعہ اور روزے کا اجر وثواب ختم کرنے کا ذریعہ ہے، لہٰذا روزہ کی حالت میں فحش فلم دیکھنا انتہائی قبیح اور ناجائز عمل ہے ، اس سے فورا سچی توبہ کی جائے اور آئندہ یہ  گناہ نہ کرنے کا پختہ عزم کیا جائے ۔

جہاں تک روزہ ٹوٹنے کی بات ہے تو واضح رہے کہ اگر فحش فلم دیکھتے دیکھتے اگر صرف مذی نکلی تو اس سے وضو ٹوٹ جائے گا ، روزہ فاسد نہیں ہوگا، اور اگر انزال بھی ہوگیا ہو تو اگر صرف دیکھنے سے انزال ہوا ہے اور اپنے عمل کا دخل نہیں ہے تو اس سے روزہ فاسد نہیں ہوگا ، لیکن اگر فحش فلمیں دیکھنے کے ساتھ ساتھ انزال ہونے میں اپنا عمل بھی شاملِ حال ہو تو اس سے روزہ فاسد ہوجائے گا، صرف قضا لازم ہوگی ، کفارہ نہیں ہوگااور توبہ و استغفار بھی کرے۔

تحفة الفقهاءمیں ہے :

"وكذلك لو نظر إلى فرج امرأة شهوة فأمنى أو تفكر فأمنى لايفسد صومه؛ لأنه حصل الإنزال لا بصنعه فلايكون شبيه الجماع لا صورةً ولا معنىً".

( تحفة الفقهاء: كتاب الصوم ، (1 / 353 ) دار الكتب العلمية بيروت)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144309100527

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں