بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 جُمادى الأولى 1444ھ 08 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

شوال کے چھ روزے عید کے دوسرے دن سے رکھنا لازم ہے یا نہیں؟


سوال

اگر کوئی شوال کے چھ  روزے رکھنے کا ارادہ کرے تو اسے لازمی ہے کہ عید کے دوسرے دن سے ہی شروع کرے یا شوال کے مہینے میں کبھی بھی رکھ سکتا ہے؟

جواب

پورے شوال کے مہینے میں چھ روزوں کی فضیلت وارد ہوئی ہے، یہ روزے عید کے دوسرے دن سے شروع کرنا لازمی نہیں ہے، بلکہ شوال کے مہینہ میں کبھی بھی رکھ سکتا ہے، چاہے لگاتار چھ روزے ایک ساتھ رکھے اور چاہے تو الگ الگ کر کے رکھے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144110200064

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں