بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 محرم 1446ھ 19 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

شریک کا جانور ذبح کرنے کی اجرت لینا


سوال

 اگر مشترکہ قربانی میں ایک شریک قصائی کا کام جانتا ہو تو کیا وہ باقی شرکاء سے اس کام کی اجرت لے سکتا ہے؟

جواب

قربانی میں شریک شخص (جو قصائی کا کام جانتا ہے) کا  مشترکہ جانور (جس میں اس کا حصہ بھی ہے) ذبح کرنے کی صورت میں باقی شرکاء سے اس کی اجرت لینا جائز نہیں ہے۔

فتاوی شامی میں ہے:

"(ولو) استأجره (لحمل طعام) مشترك (بينهما فلا أجر له) ؛ لأنه لا يعمل شيئا لشريكه إلا ويقع بعضه لنفسه فلا يستحق الأجر." 

(كتاب الاجارة، باب الاجارة الفاسدة، ج:6، ص:60، ط:سعيد)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144511102298

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں