بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 26 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

شبِ براءت کے موقع پر خصوصی کھانے کا اہتمام کرنا


سوال

اگر کوئی شخص شبِ براء ت کے موقع پر عمدہ ولذیذ کھانا بنانا چاہے تو  شرعاًایسا کھا نا تیار کرنا اور کھانا کیسا ہے؟

جواب

شبِ براءت  یا پندرہ شعبان کے دن میں خاص طور پر کھانے پینے کی اشیاء بنانا اور  تقسیم کرنا چوں کہ ثابت نہیں؛ اس لیے اس کا اہتمام اور التزام کرنا (ثواب کا باعث سمجھنا، اور نہ کرنے والوں کو اچھا نہ سمجھنا) بدعت ہے۔ اگر مقصود مرحومین  کوایصالِ ثواب کرناہو تو  اس کے لیے کسی مہینے یا دن کا انتظارنہیں کرناچاہیے، بلکہ کسی بھی دن جو میسر ہو صدقہ کرکے اس کا ثواب بخش دیاجائے۔

اگر شبِ براءت سے قطع نظر  کوئی شخص فقط اپنے گھر میں کھانے کے لیے کوئی  مخصوص چیز  بنائے تو یہ منع نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144108200891

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے