بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

16 شوال 1445ھ 25 اپریل 2024 ء

دارالافتاء

 

سارہ نام رکھنا


سوال

سارہ نام رکھنا کیسا ہے؟

جواب

سارہ حضرت ابراہیم علیہ السلام کی اہلیہ، حضرت اسحاق  علیہ السلام  کی والدہ  تھیں، اس نسبت سےبچی کا  یہ نام رکھنا درست ہے۔ 

الطبقات الکبری میں ہے:

"قال هشام بن محمد عن أبيه: فهاجر إبراهيم من بابل إلى الشام. فجاءته ‌سارة فوهبت له نفسها. فتزوجها وخرجت معه وهو يومئذ ابن سبع وثلاثين سنة.  ۔۔۔۔۔ 

قال: أخبرنا هشام بن محمد عن أبيه قال: ولد لإبراهيم - صلى الله عليه وسلم - إسماعيل. وهو أكبر ولده. وأمه هاجر. وهي قبطية. وإسحاق وكان ضرير البصر. وأمه ‌سارة بنت بثويل بن ناحور بن ساروغ بن أرغوا بن فالخ بن عابر بن شالخ بن أرفخشد بن سام بن نوح".

(ذکر ابراهيم خليل الرحمن، ج:1، ص:39، 40، ط:دار الكتب العلمية)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144507100263

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں