بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 جُمادى الأولى 1444ھ 29 نومبر 2022 ء

دارالافتاء

 

سحری کے بعد روزہ کی حالت میں احتلام ہوجانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا


سوال

اگر سحری کے بعد انسان سو جائےاور شیطان بندے کا غسل توڑ دے(احتلام ہوجائے) تو اس سے تو روزہ خراب نہیں ہوتا؟

جواب

سحری کے بعداگر روزہ دار کو سونے کی حالت میں احتلام ہو جائے تو اس سے روزہ نہیں ٹوٹتا، بلکہ روزہ صحیح ہے، البتہ جتنا جلدی ہوسکے غسل کرلے ، بلاوجہ غسل میں تاخیر نہ کرے ،تاکہ روزے کا زیادہ سے زیادہ وقت پاکی میں گزرے۔

البحرالرائق  ميں هے:

''(قوله: أو ‌احتلم أو أنزل بنظر) أي لا يفطر لحديث السنن لا يفطر من قاء، ولا من ‌احتلم، ولا من احتجم."

(البحر الرائق ،كتاب الصوم ، باب ما يفسد الصوم وما لا يفسده 2/ 293 ط: دار الكتاب الإسلامي)

 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144309100035

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں