بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو القعدة 1445ھ 23 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں گلاب کاپھول سونگھنا


سوال

اگر روزے کی حالت میں گلاب کو قصد دلی سے سونگھ لے تو کیا اس سے روزہ فاسد ہو جاۓ گا ؟

جواب

واضح رہے ،روزے کی حالت میں کسی بھی خوشبویابدبوسونگھنےسےروزہ فاسد نہیں ہوتاچاہےقصداسونگھےیابھول کرسونگھے،چاہےخوشبوتیزہویاہلکی ہو،البتہ اگرخوشبودھواں دارہواوراس کوقصداسونگھاگیایہاں تک کہ وہ دھواں روزہ دارکے حلق میں اترگیاتواس سے روزہ فاسدہوجائےگااورصرف قضاء لازم ہوگی۔

البنایۃ میں ہے:

"وفي المجتبى لو وجد طعم الكحل في حلقه أو دماغه لا بأس به لدخول رائحة المسك والعود والثوم ورائحة الغذاء ودخان النار فإنها غير معتبرة بالإجماع".

(كتاب الصوم،باب :الاكتحال والسواك للصائم،ج:4،ص:71،ط:دارالكتب العلمية)

دررالحکام شرح غررالاحکام میں ہے:

"وفي فتح القدير: الدخان والغبار إذا دخل الحلق لا يفسد فإنه لا يستطاع الاحتراز عن دخولهما من الأنف إذا طبق الفم اهـ.قلت فعلى هذا إذا أدخل الدخان حلقه فسد صومه أي دخان كان حتى إن من تبخر ببخور فآواه إلى نفسه واشتم دخانه فأدخله حلقه ذاكرا لصومه أفطر، سواء كان عودا أو عنبرا أو غيرهما لإمكان التحرز عن إدخال المفطر جوفه، وهذا مما يغفل عنه كثير فليتنبه له. ولا يتوهم أنه كشم الورد ومائه والمسك لوضوح الفرق بين هواء تطيب بريح المسك وشبهه وبين جوهر دخان وصل إلى جوفه بفعله".

(كتاب الصوم ،باب:موجب الافساد في الصوم،ج:1،ص:202،ط:داراحياءالكتب العربية)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144509102061

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں