بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 جُمادى الأولى 1444ھ 09 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

روزہ کی حالت میں غیر ضروری بال اور ناخن کاٹنے کا حکم


سوال

کیا روزہ کی حالت میں غیر ضروری بال اور ناخن کاٹ سکتے ہے؟

جواب

روزہ کی حالت میں غیر ضروری (زیر ناف، بغل اور مونچھوں وغیرہ کے) بال اور ناخن کاٹنا جائز ہے، اس میں کوئی مضائقہ نہیں ،یہ روزے کےمنافی نہیں اس لئے ا س سے روزہ فاسد یا مکروہ نہیں ہوتا۔

البحر الرائق میں ہے :

"الصوم في الشرع الامساك عن المفطرات الثلاث حقيقةّ او حكماّ في وقت مخصوص من شخص مخصوص مع النية."

(البحر الرائق، ج:2، ص:259، ط:سعيد)

فتاوی شامی میں ہے :

قوله: "و تنظيف بدنه " بنحو ازالة الشعر من ابطه ، ويجوز فيه الحلق و النتف اوليٰ."

( رد المختار ، ج:6، ص:406، ط:سعید )

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144309101133

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں