بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 ذو الحجة 1445ھ 12 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

روزےکی حالت میں کھارےپانی سےوضو کرنے کاحکم


سوال

1۔ہمارے محلے میں میٹھے پانی کا مسئلہ ہے، اس وجہ سے کھارا پانی کا استعمال زیادہ ہے، اگر روزے کی حالت میں کھارے پانی سے وضو کیا جائے تو وضو کرنے کے بعد بھی پانی کا ذائقہ منہ میں رہتا ہے، جو تھوک کے ساتھ حلق میں چلا جاتا ہے تو کیا اس سے روزہ ٹوٹ جائے گا یا نہیں؟

2۔ روزے کی حالت میں آنکھوں میں قطرے ڈالے جا سکتے ہیں یانہیں؟

جواب

1۔واضح رہےکہ جس طرح میٹھےپانی کاذائقہ ہوتاہے،اسی طرح کھارےپانی کا بھی ذائقہ ہوتاہےاورپانی سےکلی کرنےکےبعدجوذائقہ رہتاہےاس سےروزہ فاسد نہیں ہوتا،لہٰذا روزےکی حالت میں کھارے پانی سے وضو کرنے سے روزہ  نہیں ٹوٹتا، روزہ تب فاسد ہوتا ہے جب روزہ یادہونےکی حالت میں پانی حلق سے نیچے اترجائے۔

2۔روزہ کی حالت میں آنکھ میں دوا (قطرے)ڈالنا جائز ہے، اس سے روزہ نہیں ٹوٹتا، اگرچہ دوا کا ذائقہ حلق میں محسوس ہو۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

'' ولو اقطر شیئاً من الدواء في عینه لا یفطر صومه عندنا وإن وجد طعمه في حلقه''.

(كتاب الصوم، الباب الرابع فیما یفسد وما لایفسد، 203/1، ط: دار الفكر بيروت)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144408101774

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں