بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

25 جمادى الاخرى 1443ھ 29 جنوری 2022 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں تھوک نگلنا


سوال

روزے  کی حالت میں تھوک نگلنا کیسا ہے؟

جواب

روزہ کی حالت میں منہ میں تھوک جمع ہوجائے  اور اس کو نگل لے تو اس سے روزہ فاسد نہیں ہوتا، البتہ  روزہ دار کے  لیے  قصدًا تھوک  منہ  میں جمع کرنا اور پھر اس کو نگلنا مکروہ ہے۔

الفتاوى الهندية (1 / 199):

"وَيُكْرَهُ لِلصَّائِمِ أَنْ يَجْمَعَ رِيقَهُ فِي فَمِهِ ثُمَّ يَبْتَلِعَهُ كَذَا فِي الظَّهِيرِيَّةِ".

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144207201517

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں