بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 ذو الحجة 1445ھ 12 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

روزے میں بیوی سے بوس و کنار کیا اور انزال ہوگیا


سوال

روزے کی حالت میں اپنی بیوی کے ساتھ سحری کے بعد لیٹا تھا، میری بیوی کا روزہ نہیں تھا، ہم نے ہم بستری نہیں کی، لیکن میرا نزال ہوگیا۔ شرعی طور پر کیا حکم ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں اگر بیوی کے ساتھ بوس و کنار کیا اور انزال ہوگیا تو آپ کا روزہ فاسد ہوگیا، قضا لازم ہے، کفارہ نہیں۔

آئندہ آپ کو احتیاط کرنا چاہیے، کیوں کہ اگر کسی کو خود پر اعتماد نہ ہو تو روزے کی حالت میں اس کے لیے بوس و کنار مکروہ ہوگا۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (2 / 398):

"أما لو أنزل قضى فقط كما سيذكره المصنف أي بلا كفارة ".

فقط و الله أعلم


فتوی نمبر : 144109201868

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں