بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 محرم 1446ھ 22 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں میاں بیوی ایک دوسرے کی شرمگاہ کو چھوتے ہوئے سوجانا


سوال

کیا روزے کی حالت میں میاں بیوی ایک دوسرے کی شرمگاہ کو  چھو یا پکڑ سکتے ہیں؟ گو کہ اس کا مقصد لذت حاصل کرنا نہ ہو بلکہ دونوں کوایساکرتے ہوئے سونے کی عادت ہو۔

جواب

صورت مسئولہ میں روزے کی حالت میں میاں بیوی کا ایک دوسرے کی شرمگاہ کو چھونا اور پکڑنا مکروہ ہے اگرچہ لذت حاصل کرنا مقصد نہ ہو۔لہذا روزے کی حالت میں اس عمل سے اجتناب کیا جائے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

"وأما القبلة الفاحشة، وهي أن يمص شفتيها فتكره على الإطلاق، والجماع فيما دون الفرج والمباشرة كالقبلة في ظاهر الرواية. قيل إن المباشرة الفاحشة تكره، وإن أمن هو الصحيح، كذا في السراج الوهاج. و المباشرة الفاحشة أن يتعانقا، وهما متجردان ويمس فرجه فرجها، وهو مكروه بلا خلاف، هكذا في المحيط."

(کتاب الصوم ،الباب الثالث فيما يكره للصائم وما لا يكره،ج:1،ص:200،ط:رشیدیۃ)

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144509100109

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں