بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 ذو القعدة 1445ھ 27 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

روزے کی حالت میں بیمارہونے والے شخص کا حکم


سوال

اگر زورے کے حالت میں کسی کا بلڈ پریشر کم  یا  زیادہ  ہوجائے یا کسی اور  بیمار کو دوائی    کھانے کی ضرورت پڑ جائے تو اس صورت میں روزہ کھول سکتا ہے  یا نہیں؟

جواب

واضح رہے کہ روزے  کی حالت میں  اگر کوئی شخص ایسی بیماری میں مبتلا ہو جائے  کہ دوائی کھانے کے  علاوہ اس بیماری کا کوئی علاج نہ ہو ،اور دوائی نہ کھانے  کی صورت میں مرض بڑھنے کا اندیشہ ہو،تو ایسی صورت میں  مریض روزے کی حالت میں دوائی لے سکتا ہے،بعد میں اس روزے کا قضا کر لے،اس میں کفارہ نہیں ۔

النتف فی الفتاوی میں ہے:

"والثاني يفطر المريض اذا أضره الصيام وخشى زيادة اي مرض كان."

(کتاب الصوم،‌‌من يجوز لهم الافطار في رمضان،  ص:96، مکتبہ رشیدیہ،کوئٹہ)

تحفۃ الملوک میں ہے:

"‌صوم ‌المريض والمسافر والمريض إذا خاف شدة مرضه أو تأخر برئه أفطر وقضى."

(فصل، ص:146، مسئلہ نمبر:250، ط:دار البشائر الإسلامية - بيروت)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144509101547

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں