بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 ذو القعدة 1445ھ 22 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

روزے دار عورت کے لیے لپ اسٹک لگانے کا حکم


سوال

کیا لپ اسٹک لگانے سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے؟

جواب

روزے کی حالت میں لپ اسٹک لگانے سے احتراز کرنا چاہیے کیوں کہ  لپ اسٹک کے اجزاء کا منہ میں جانے  کا خطرہ رہتا ہے،اگر اجزاء حلق سے نیچے اتر جائیں گے تو روزہ فاسد ہو جائے گا، اور اگر نہ بھی جائیں  خطرہ رہے گا اور روزہ مکروہ ہو جائے گا، لہٰذا روزہ میں لپ اسٹک لگانے سے اجتناب کرنا چاہیے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

"يكره مضغ العلك للصائم كذا في فتاوى قاضي خان. وهكذا في المتون. قال مشايخنا: المسألة على التفصيل إن لم يكن العلك ملتئما مصلحا فطره، وإن كان مصلحا ملتئما فإن كان أسود فطره، وإن كان أبيض لم يفطره إلا أن في الكتاب لم يفصل كذا في المحيط. وكره ‌ذوق شيء، ومضغه بلا عذر كذا في الكنز".

(کتاب الصوم، الباب الثالث فیما یکرہ للصائم ومالایکرہ، ج:1، ص:199، ط:رشيديه)

البحرالرائق میں ہے:

"(قوله: ‌وكره ‌ذوق شيء، ومضغه بلا عذر) لما فيه من تعريض الصوم للفساد، ولا يفسد صومه لعدم الفطر صورة ومعنى قيد بقوله: بلا عذر؛ لأن الذوق بعذر لا يكره كما قال في الخانية فيمن كان زوجها سيئ الخلق أو سيدها لا بأس بأن تذوق بلسانها وليس من الأعذار، والذوق عند الشراء ليعرف الجيد من الرديء بل يكره كما ذكره في الولوالجي وتبعه في فتح القدير".

(کتاب الصوم، باب مایفسد الصوم ومالایفسدہ، ج:2، ص:301، ط:دار الکتاب الاسلامی)

فقط و الله أعلم


فتوی نمبر : 144509101671

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں