بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 ربیع الثانی 1443ھ 05 دسمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

روزہ میں ڈائیلاسز (گردے واش) کرانا


سوال

 گردے واش کرانے سے( ڈائیلاسز) سے روزہ ٹوٹتا  ہےکہ نہیں؟

جواب

ڈائیلاسز میں مصنوعی گردے کی مشین سے انسانی جسم  کا خون صاف کیا جاتا ہے،  اس میں مریض کے جسم کی رگ میں دو نالیاں لگائی جاتی ہے، ایک سے خون نکل کر مشین میں جاتا ہے اور دوسری سے صاف ہوکر  مریض کے جسم میں داخل ہوجاتا ہے، اس سے روزہ فاسد نہیں ہوتا ، اس لیے کہ اس میں خون کا نکلنا  اور داخل ہونا رگوں کے ذریعہ سے ہوتا ہے، معتاد منفذ (قدرتی راستوں) کے ذریعے  نہیں ہوتا،  اور  رگوں کے ذریعے کسی چیز کے داخل ہونے سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔

فتاوی شامی میں ہے:

"قَالَ فِي النَّهْرِ:؛ لِأَنَّ الْمَوْجُودَ فِي حَلْقِهِ أَثَرٌ دَاخِلٌ مِنْ الْمَسَامِّ الَّذِي هُوَ خَلَلُ الْبَدَنِ وَالْمُفْطِرُ إنَّمَا هُوَ الدَّاخِلُ مِنْ الْمَنَافِذِلِلِاتِّفَاقِ عَلَى أَنَّ مَنْ اغْتَسَلَ فِي مَاءٍ فَوَجَدَ بَرْدَهُ فِي بَاطِنِهِ أَنَّهُ لَايُفْطِرُ". ( ٢ / ٣٩٥)

فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144209200670

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں