بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

29 صفر 1444ھ 26 ستمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

کلثوم نام رکھنے کا حکم


سوال

کلثوم نام رکھنا کیسا ہے؟

جواب

کُلثُوم نام کا معنی ہے:  چہرے اور رخسار پر گوشت چڑھا ہوا، (القاموس الوحید، المادّۃ: ک/ل/ ث، ص:1418، ط:ادارۃ الاسلامیات)

مذکورہ نام  کےایک انصاری صحابی کلثوم بن الہدم ہیں، مدنی صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین میں سب سے پہلے انہی کا انتقال ہوا ہے، لہذا  بچے کا نام کلثوم رکھنا نہ صرف جائز ہے، بلکہ  صحابی رسول کا نام ہونے کی وجہ سے باعث برکت بھی ہے۔

الإصابة في تمییز الصحابۃ میں ہے:

"كلثوم بن الهدم بكسر الهاء وسكون الدال ابن امرئ القيس بن الحارث بن زيد بن عبيد بن زيد بن مالك بن عوف بن مالك بن الأوس الأنصاري الأوسي.

ذكر موسى بن عقبة وغيره من أهل المغازي أن النبي صلى الله عليه وآله وسلم نزل عليه بقباء أول ما قدم المدينة وقال بعضهم نزل على سعد بن خيثمة وقال الواقدي كان نزوله على كلثوم وكان يتحدث في بيت سعد بن خيثمة لأن منزله كان منزل العرب.

وذكر الطبري وابن قتيبة أنه أول من مات من أصحاب رسول الله صلى الله عليه وآله وسلم بالمدينة ثم مات بعده أسعد بن زرارة وله ذكر في ترجمة غلامه نجيح".

(حرف الکاف، الكاف بعدها اللام، ج:5، ص:617، ط:دارالحیل)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144312100123

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں