بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 ذو الحجة 1442ھ 29 جولائی 2021 ء

دارالافتاء

 

قربانی اور عقیقہ کے جانور کے ذبح کے وقت دعائیں پڑھنا


سوال

ایک گاۓ میں عقیقہ بھی ہو اور قربانی بھی ہو تو پہلے کون سي دعا پڑھي جاۓ؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں جانور ذبح كرتے هوئے قربانی یا عقیقہ کي دعا كے الفاظ كا  زبان سے  ادا كرنا  ضروری نہیں،  تاہم ذبح کرتے وقت تمام شرکاء کی جانب سے ذبح کرنے کا خیال دل میں رکھنا کافی ہے،نيز قربانی اور عقیقے کے بعد مخصوص دعائیں پڑھنا واجب نہیں، بلکہ مستحب ہے،   لهذا اولاّ ’’بسم اللہ اللہ اکبر‘‘  کہتے ہوئے  جانور ذبح کرلياجائے،اس كے بعد  قربانی اور عقیقہ دونوں کی دعائيں    پڑھ  سكتے هيں، دونوں ميں سے جس دعا كو مقدم كريں درست هے۔

بدائع الصنائع میں ہے:

"أَمَّا الَّذِي يَرْجِعُ إلَى مَنْ عَلَيْهِ التَّضْحِيَةُ، فَمِنْهَا: نِيَّةُ الْأُضْحِيَّةَ لَاتُجْزِي الْأُضْحِيَّةُ بِدُونِهَا؛ لِأَنَّ الذَّبْحَ قَدْ يَكُونُ لِلَّحْمِ، وَقَدْ يَكُونُ لِلْقُرْبَةِ وَالْفِعْلُ لَايَقَعُ قُرْبَةً بِدُونِ النِّيَّةِ؛ قَالَ النَّبِيُّ عَلَيْهِ الصَّلَاةُ وَالسَّلَامُ: «لَا عَمَلَ لِمَنْ لَا نِيَّةَ لَهُ»، وَالْمُرَادُ مِنْهُ عَمَلٌ هُوَ قُرْبَةٌ؛ وَلِلْقُرْبَةِ جِهَاتٌ مِنْ الْمُتْعَةِ وَالْقِرَانِ وَالْإِحْصَارِ وَجَزَاءِ الصَّيْدِ وَكَفَّارَةِ الْحَلْقِ وَغَيْرِهِ مِنْ الْمَحْظُورَاتِ، فَلَاتَتَعَيَّنُ الْأُضْحِيَّةَ إلَّا بِالنِّيَّةِ؛ وَقَالَ النَّبِيُّ عَلَيْهِ الصَّلَاةُ وَالسَّلَامُ: «إنَّمَا الْأَعْمَالُ بِالنِّيَّاتِ وَإِنَّمَا لِكُلِّ امْرِئٍ مَا نَوَى»، وَيَكْفِيهِ أَنْ يَنْوِيَ بِقَلْبِهِ وَلَايُشْتَرَطُ أَنْ يَقُولَ بِلِسَانِهِ مَا نَوَى بِقَلْبِهِ، كَمَا فِي الصَّلَاةِ؛ لِأَنَّ النِّيَّةَ عَمَلُ الْقَلْبِ، وَالذِّكْرُ بِاللِّسَانِ دَلِيلٌ عَلَيْهَا".

( كتاب التضحية، فَصْلٌ فِي شَرَائِطُ جَوَازِ إقَامَةِ الْوَاجِبِ فِي الْأُضْحِيَّةِ، ٥ / ٧١) 

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212200694

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں