بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 رجب 1444ھ 27 جنوری 2023 ء

دارالافتاء

 

قرآن کریم پر چپل گرنے کی صورت میں معافی کا طریقہ


سوال

 مجھ سے غلطی سے قرآن شریف کے اوپر چپل پر گئے ہیں،اس کی معافی کا طریقہ کیا ہے؟

جواب

 قرآن  کریم کے اوپر غلطی سے چپل گرجانا قرآن کی بے ادبی ہے، اس کوتاہی کی معافی کا طریقہ یہ ہی ہے کہ سائل سچے دل سے اس پر توبہ و استغفار کرے، اللہ تعالیٰ ان شاءاللہ معاف کردیں گے۔

فتاوی شامی میں ہے:

"المصحف إذا صار بحال لا يقرأ فيه يدفن كالمسلم، ويمنع النصراني من مسه، وجوزه محمد إذا اغتسل ولا بأس بتعليمه القرآن والفقه عسى يهتدي. ويكره وضع المصحف تحت رأسه إلا للحفظ والمقلمة على الكتاب إلا للكتابة.

(قوله: يدفن) أي يجعل في خرقة طاهرة ويدفن في محل غير ممتهن لا يوطأ. وفي الذخيرة وينبغي أن يلحد له ولا يشق له؛ لأنه يحتاج إلى إهالة التراب عليه، وفي ذلك نوع تحقير إلا إذا جعل فوقه سقف بحيث لا يصل التراب إليه فهو حسن أيضا اهـ. وأما غيره من الكتب فسيأتي في الحظر والإباحة أنه يمحى عنها اسم الله تعالى وملائكته ورسله ويحرق الباقي ولا بأس بأن تلقى في ماء جار كما هي أو تدفن وهو أحسن. اهـ.

(قوله: كالمسلم) فإنه مكرم، وإذا مات وعدم نفعه يدفن وكذلك المصحف، فليس في دفنه إهانة له، بل ذلك إكرام خوفا من الامتهان."

(کتاب الطہارۃ ، سنن الغسل ج نمبر ۱ ص نمبر  ۱۷۷،ا یچ ایم سعید)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144404100278

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں