بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

قادیانی کے خلاف حضرت گنگوہی کا فتوی


سوال

السلام علیکم کتاب المھند کے صفحہ 86 پر یہ لکھا ہے کہ مولانا رشید احمد گنگوہی کا فتوی ہے کہ قادیانی کافر ہے، یہ ایک بریلوی صاحب کا اعتراض ہے کہ المھند میں غلط حوالہ دیا گیا ہے اور مولانا رشید صاحب کا ایسا کوئی فتوی ہے ہی نہں۔ تو برائے کرم مجھے مولانا رشید صاحب کے فتوے کا حوالہ دے دیں کہ انھوں نے کہاں قادیانی کو کافر کہا ہے۔ جزاک اللہ

جواب

کتاب باقیات فتاویٰ رشیدیہ میں مرزا قادیانی کے بارے حضرت مولانا گنگوہی رحمہ اللہ کے فتاوی موجود ہیں، جن کی عبارت درج ذیل ہے: مرزا غلام احمد قادیانی، بوجہ ان تاویلات فاسدہ اور ہفوات باطلہ کے، منجملہ دجالوں کذابوں کے، خارج از طریقہ اہل سنت و داخل زمرہ اہل اہواء ہے، اور اس کے اتباع بھی مثل اس کے ہیں۔ مرزا غلام احمد قادیانی کے کلمات و دعاوی، جہاں تک مجھے معلوم ہوئے، بیشک موجب فسق ہیں، اور قطعا فاسق و ضال و مضل اور داخل فرقہائے مبتدعہ و اہل ہوا ہے۔ اس سے اور اس کے پیروان سے ملنا ہرگز ہرگز جائز نہیں اور جو لوگ اس کی تکفیر کرتے ہیں، وہ بھی حق پر ہیں باقیات فتاوی رشیدیہ، ص:37-38، ط: حضرت مفتی الٰہی بخش اکیڈمی کاندھلہ یوپی انڈیا


فتوی نمبر : 143408200005

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے