بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 شوال 1441ھ- 01 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

پرائز بانڈز کی انعامی رقم رشوت میں دینا


سوال

کیا پرائز بانڈز کی انعامی رقم رشوت وغیرہ میں استعمال کرسکتی ہیں؟,

جواب

پرائز بانڈز کی انعامی رقم لینا ہی جائز نہیں ہے اگر کسی طرح حاصل ہوگئی تو اس کا مصرف مستحقین زکوۃ ہیں کہ ان کو بلا نیت ثواب صدقہ کر دی جائے ۔رشوت بہر صورت حرام ہے اس لیے رشوت وغرہ میں دینا جائز نہیں ہے۔


فتوی نمبر : 143101200593

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے