بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 ذو الحجة 1441ھ- 04 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

نکاح سے پہلے لڑکی سے ناجائز تعلق کی صورت میں نکاح کا حکم


سوال

محبت کی شادی کی صورت ہو اور نکاح سے پہلے تعلقات بھی رہے ہوں (oral)اس کے بعد نکاح ہوجائے اور زندگی گزر  رہی ہو ،  کیا نکاح جائز ہے؟

جواب

مرد و عورت کا نکاح مسنون کے بغیر آپس میں تعلق قائم رکھنا بہت بڑا گناہ ہے، اس کے لیے دنیا اور آخرت دونوں جگہ سخت سزا ہے، تاہم اگر کسی مرد کا کسی عورت کے ساتھ تعلق ہو پھر وہ نکاح کرلیں تو ان کا نکاح کرنا شرعاً درست ہے، لہذا سابقہ گناہ پر ندامت کے ساتھ  اس پر خوب توبہ استغفار کرنا ضروری ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (3 / 49):

"لو نكحها الزاني حل له وطؤها اتفاقًا". فقط والله أعلم


فتوی نمبر : 144108200871

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں