بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 شعبان 1441ھ- 06 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

نکاح فارم میں دستخط کرتے وقت لڑکی کا خاموش رہنا


سوال

ایک لڑکی سے نکاح کے وقت ایجاب یا قبول کا کچھ بھی نہیں پوچھا گیا۔ صرف نکاح کے فارم میں سگنیچر کرنے کو کہا گیا تو لڑکی نے سگنیچر کر دیے۔ کیا یہ نکاح ھوگیا؟

جواب

اگر مذکورہ لڑکی کنواری تھی اور اس کو یہ معلوم تھا کہ یہ نکاح کے کاغذات ہیں اور میرا نکاح فلان لڑکے سےہورہا ہے، توان سب چیزوں کے جاننے کے بعد اس نے نکاح فارم پر خاموشی سے دستخط کردیے یہ اس کی رضامندی شمار ہوگی۔ اس کے بعد عقد نکاح کی بقیہ کارروائی دستور کے مطابق ہوئی ہو تو مذکورہ نکاح شرعا منعقد ہوگیا۔ فقط واللہ اعلم۔


فتوی نمبر : 143406200068

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے