بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 صفر 1443ھ 17 ستمبر 2021 ء

دارالافتاء

 

ننگے سر درس قرآن دینا


سوال

 بغیر ٹوپی کے قرآن مجید یا کتابوں کا درس دینا کیسا ہے؟

جواب

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم عمومی اَحوال میں عمامہ یا ٹوپی کے ذریعہ سر مبارک کو ڈھانپا کرتے تھے؛ اس لیے سر پر عمامہ یا ٹوپی پہننا سننِ زوائد میں سے ہے، جس کا درجہ مستحب کا ہے۔ اور سر کا ڈھانپنا لباس کا حصہ ہے۔ صحابہ کرام علیہم الرضوان اور صلحائے امت کا بھی یہی معمول تھا۔

لہذا قرآن کا یا دینی کتابوں کا درس دیتے ہوئے ٹوپی پہننے کا اہتمام اور زیادہ ہونا چاہیے۔ البتہ اگر کبھی بیماری یا عذر کی وجہ سے ٹوپی نہ پہن سکے تو کوئی حرج نہیں ہے۔

زاد المعاد في هدي خير العباد (1/ 130):

"فصل في ملابسه صلى الله عليه وسلم
كانت له عمامة تسمى: السحاب كساها علياً، وكان يلبسها ويلبس تحتها القلنسوة. وكان يلبس القلنسوة بغير عمامة، ويلبس العمامة بغير قلنسوة".

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144111200374

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں