بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو القعدة 1445ھ 26 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

نمازِ فجر کی ادائیگی میں کوتاہی دور کرنے کا طریقہ


سوال

نماز فجر کی ادائیگی میں کوتاہی کیسے دور ہوگی ؟

جواب

فجر کی نماز میں کوتاہی عموما ًرات کوزیادہ دیر تک جاگنے کی وجہ سے ہوتی ہے،فجر کے اہتمام کے لیے رات کو جلد سونے کا معمول بنایا جائے، بلاضرورت عشا کے بعد دیر تک نہ جاگے،  اس کے علاوہ  رات کو سونے سے پہلے دل میں فجر کی نماز پڑھنے کا پکا ارادہ کرلے اور صبح جاگنے کے لیے حتی الوسع  کوشش کرے، الارم وغیرہ بھی لگالے اور گھر والوں کو جگانے کا کہے، اور اگر ایسا کوئی نہ ہو تو جو دوست وغیرہ نماز کے عادی ہیں ان سے درخواست کرے کہ فجر میں اٹھانے کی ترتیب بنالیں،نیز سورۃ الکھف کی آخری چار آیات پڑھ کر سونے کا معمول بنائیں، اس کے ساتھ ساتھ دعاواستغفارکثرت سے کرتے رہیں، تو صدق نیت اور پختہ عزم کے ذریعہ فجر میں اٹھا جاسکتا ہے۔

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144404100544

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں