بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 ربیع الاول 1444ھ 02 اکتوبر 2022 ء

دارالافتاء

 

جسم اور بستر وغیرہ نجاست لگنے کی صورت میں پاک کیسے کیا جائے؟


سوال

ہم بستری کے بعد غسل سے پہلے اگر کپڑے پہن لیے جائیں تو وہ لباس پاک ہوگا یا ناپاک؟  اور چھوٹے بچےاگر بستر پر پیشاب کردیں تو بستر کیسے پاک کیا جائے گا؟

جواب

ہم بستری کے بعد اگر شرم گاہ کو کسی کپڑے  وغیرہ سے اچھی طرح صاف کیے بغیر تری اور نجاست کی حالت میں کپڑے پہن لیے تو  وہ نجس تری لگنے کی وجہ سے ناپاک ہو جائیں گے۔  البتہ اگر پونچھنے  کی وجہ سے وہ  خشک ہوجائے اور  تری اس پر باقی نہ رہے تو اس کے بعد غسل کرنے سے پہلے جو کپڑے پہنے جائیں گے، وہ پاک ہی رہیں گے، ناپاک نہیں ہوں گے بشرطیکہ شرم گاہ سے مزید نجاست نکل کر ان کپڑوں پر نہ لگے، چناں چہ غسل کرنے کے بعد ان ہی کپڑوں کو دوبارہ پہن کر نماز پڑھنا جائز ہوگا۔  لیکن بہتر یہ ہے کہ شرم گاہ کو دھو کر پاک کرنے سے پہلے پہننے کے لیے کوئی الگ کپڑا  رکھا جائے، نماز والے کپڑے ایسے وقت میں پہننا خلافِ احتیاط ہے۔

نیز  بچے کا پیشاب یا کو ئی بھی نجس چیز بستر پر لگ جائے اور  وہ ناپاکی بستر میں جذب ہو جائے توپورے بستر کو دھونا لازم نہیں، بلکہ اسے پاک کرنے کے لیے جس جگہ ناپاکی لگی ہے اسی مقام پر تین مرتبہ پانی بہانا ضروری ہے اور  (اگر اسے نچوڑنا ممکن نہ ہو تو) ہر مرتبہ  پانی بہا کر اتنی دیر چھوڑ دیا جائے کہ اس سے پانی ٹپکنا بند ہوجائے،  اور اس سے پیشاب وغیرہ کی بدبو اور  دھبہ ختم ہوجائے تو تین مرتبہ ایسا کرنے سے وہ  بستر    پاک ہو جائے گا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144212202111

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں