بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 شعبان 1441ھ- 03 اپریل 2020 ء

دارالافتاء

 

نا جائز اولاد سے شادی حکم


سوال

میں یہ جاننا چاہتاہوں کہ کیا کسی کی ناجائزاولاد سے شادی جائزہےیانہیں؟

جواب

جائزتوہےالبتہ بہترنہیں ہےاس لیےکہ نکاح میں شریعت اس بات کی ترغیب دیتی ہےکہ لڑکا،لڑکی کےانتخاب کےوقت خاندانی شرافت کوبھی پیش نظررکھاجائےتاکہ ازداوجی زندگی کےلیےاورہونےوالی اولاد کی اچھی تربیت کےلیےمفیدثابت ہو۔ اخلاق کی پاکیزگی میں خاندانی شرافت کابڑادخل ہوتاہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143101200585

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے