بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 ذو القعدة 1445ھ 22 مئی 2024 ء

دارالافتاء

 

نعلین زھراء نام رکھنا


سوال

نعلین زھرا نام رکھ سکتے ہیں یا نہیں؟ راہ نمائی فرما دیں۔

جواب

واضح رہے کہ  نعلین تثنیہ ہے "نعل" کا،  نعل جوتے کو کہتے ہیں اور زھرا کا اصل تلفظ"زھراء" ہے، اس کے معنی سفید بادل، چمکتے اور سفید چہرے والی عورت کے ہیں اور "زھراء" حضرت فاطمۃ الزھراء رضی اللہ عنہا کا لقب بھی ہے، " نعلین زھراء  "عربی گرامر کے اعتبار سے درست نہیں،نیز اس کا معنی بھی درست نہیں،لہٰذا یہ نام نہ رکھا جائے،  " نعلین زھراء  " کے بجائے  صرف "زھراء " یا " فاطمہ " نام رکھا جاسکتا ہے۔

القاموس الوحید میں ہے:

"النَّعْلُ :جوتا۔۔۔ج:نِعَال و أَنْعُل."

(ص:1673،ط:ادارۂ اسلامیات )

تاج العروس میں ہے:

"(و) الزهراء: (المرأة المشرقة الوجه) والبيضاء المستنيرة المشربة بحمرة.

(و) الزهراء: (في قول رؤبة) بن العجاج الشاعر: (سحابة بيضاء برقت بالعشي) ، لاستنارتها."

(فصل في زهر،ج:11،ص:479،ط:دار الهداية)

الصحاح تاج اللغۃ و صحاح العربیۃ میں ہے:

"‌والأَزْهَرُ: ‌النَيِّرُ. ويُسَمَّى القمر الأزهر ابن السكيت: الأزهران: الشمس والقمر. ورجل أزهر، أي أبيض مشرق الوجه، والمرأة زهراء".

(‌‌فصل الزاى،ج:2،ص:674،ط:دار العلم للملايين۔بيروت)

فقط والله اعلم 


فتوی نمبر : 144406100008

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں