بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 جُمادى الأولى 1444ھ 07 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

میزان بینک میں بچت سیونگ اکاؤنٹ اور روپی سیونگ اکاؤنٹ کھلوانا اور منافع حاصل کرنا


سوال

میزان بینک کی بچت سیونگ اکاؤنٹ اور روپی سیونگ اکاؤنٹ کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ اگر اس میں پیسے رکھے جائیں اوراس پر جو منافع آتا ہے تو کیا وہ حلال ہے یا حرام؟

جواب

میزان بینک یا دیگر مروجہ غیر سودی بینکوں میں سے کسی بھی بینک میں بچت سیونگ اکاؤنٹ اور روپی سیونگ اکاؤنٹ کھلوانا اور اس سے منافع حاصل کرنا جائز نہیں؛ کیوں کہ مروجہ اسلامی بینکوں کے معاملات پوری طرح شریعت کے موافق نہیں ہیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144112200795

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں