بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 جُمادى الأولى 1444ھ 03 دسمبر 2022 ء

دارالافتاء

 

معاشی اسلامی اصطلاحات


سوال

مجھے صدقہ،ہدیہ،خیرات،فدیہ،اور دیگر معاشی اسلامی اصطلاحات کی جامع تعریف سمجھا دیں۔

جواب

1۔ صدقہ : کسی محتاج کو اللہ تعالیٰ سے تقرب کی نیت سے کوئی چیز دینے  کو کہتے ہیں، صدقاتِ واجبہ (زکاۃ، صدقہ فطر وغیرہ)  مستحق کو دینا ہی ضروری ہے، جب کہ نفلی صدقات  غریب اور امیر دونوں کو دے سکتے ہیں۔

2۔ہدیہ :کے معنی  تحفہ کے ہیں ، تحفہ معمولی ہو یا قیمتی، کسی انسان کی محبت  اور اس سے اظہارِ تعلق کے لیے اسے کچھ دینا   ”ہدیہ“ کہلاتا ہے، اور ہدیہ  امیر اور غریب دونوں کو دے سکتے ہیں۔حکیم الامت حضرت مولانا اشرف علی تھانوی صاحب کے ملفوظات میں ہے:
'' صدقہ اور ہدیہ میں یہ فرق ہے کہ صدقہ میں محض ثواب اور ہدیہ میں ثواب اور تطییب القلب دونوں مقصود ہوتے ہیں''۔

3۔خیرات کا معنی ہے: نیکی اور بھلائی کے کام ،  ہمارے عرف میں اس کا عام اطلاق ”صدقہ نافلہ“ پر ہوتا ہے یعنی جو مال اللہ تعالیٰ کی خوشنودی کے لیے کسی خیر کے کام میں خرچ کیا جائے وہ صدقہ و خیرات کہلاتا ہے، اس کے لیے شرعاً کوئی خاص طریقہ مخصوص نہیں ہے،  یہ مال دار اور فقیر  دونوں کو دی جاسکتی  ہے۔

4۔فدیہ: کسی برائی یا غلطی کی بناء پر شریعت کےطرف سے  مکلف و پابند شخص  پر عائد ہونے والا بدل و عوض۔باقی جن اسلامی معاشی اصطلاحات کا جاننا مطلوب ہو،ان کا ذکر کرکے معلوم کیا جاسکتا ہے یا اس موضوع کی کتابیں دیکھی جاسکتی ہیں۔

موسوعہ فقہیہ میں ہے:

"واصطلاحا: هي البدل الذي يتخلص به المكلف من مكروه توجه إليه" 

(فديه،ج:32،ص:65،ط:وزارة الأوقاف والشئون الإسلامية ،الكويت)

بدائع الصنائع میں ہے:

'' وأما صدقة التطوع فیجوز صرفها إلی الغنی لأنها تجري مجری الهبة.''

(بدائع الصنائع، ۲/48، ط: سعید)

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144402100238

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں