بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

25 جُمادى الأولى 1445ھ 10 دسمبر 2023 ء

دارالافتاء

 

مسجد میں بیٹھ کر موبائل میں دیکھ کر قران کی تلاوت کرنے کا حکم


سوال

مسجد میں بیٹھ کر موبائل میں قران کی تلاوت کرنا کیسا ہے ؟ جب کہ مسجد کی الماری میں قرآن موجود ہو!

جواب

مسجد  میں بیٹھ کر بھی موبائل میں دیکھ کر تلاوت کرنا جائز ہے، البتہ مصحف  (قرآنِ پاک ) میں دیکھ کر تلاوت کرنا موبائل میں دیکھ کر تلاوت کرنے کے مقابلے میں زیادہ  برکت  کا سبب ہے، کیوں کہ مصحف شریف کو ہاتھوں میں ادب  واحترام سے پکڑنے  میں زیادہ اہتمام و ادب ہے، جو کہ ظاہر ہے موبائل میں حاصل نہیں ہوسکتا، البتہ نفسِ تلاوت کے ثواب میں کوئی فرق نہیں آئے گا، اس  لیے کوشش کرنی  چاہیے کہ اگر قرآنِ کریم کا نسخہ (مصحف) دست یاب ہو تو بلا عذر موبائل میں تلاوت  کرنے کے  بجائے قرآنِ کریم کے نسخے سے ہی دیکھ کر تلاوت کی جائے۔

نوٹ: وضو کے بغیر قرآنِ کریم کی تلاو ت  جائز ہے، لیکن قرآنِ کریم کو ہاتھ لگانا جائز نہیں ہے، اس لیے موبائل کی اسکرین پر اگر قرآنِ کریم  کھلا ہوا ہو تو اسکرین کو  وضو کے بغیر چھونا جائز نہیں ہے، اس کے علاوہ  موبائل کے دیگر حصوں کو  مختلف  اطراف  سے چھونا جائز ہے، اس دوران اگر صفحہ پلٹنا ہو تو ہاتھ کی انگلی پر کوئی کپڑا لپیٹ کر بھی صفحہ پلٹا جاسکتاہے۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144205200019

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں