بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 ذو القعدة 1442ھ 21 جون 2021 ء

دارالافتاء

 

مردوں کا چار مہینے تبلیغ میں لگانا


سوال

 کیا مردوں کو چار ماہ جماعت میں جانا درست ہے؟

جواب

مردوں کا  تبلیغ میں چار ماہ لگانا   اپنی اصلاح اور دین کی دعوت کے احساس کے اجاگر کرنے میں بہت مفید ہے، اور تبلیغ کے نظم کی باگ ڈور ابتدا سے ہی اہلِ حق اہلِ علم کے ہاتھ میں ہے، اس لیے بلاشبہ تبلیغ میں چار ماہ لگانا درست ہے۔ 

البتہ افراد اور نجی احوال کے اعتبار سے نوعیت مختلف ہوسکتی ہے، اس لیے جس شخص نے طویل مدت کے لیے اصلاح یا تبلیغ کی غرض نکلنا ہو اسے چاہیے کہ معتبر و متدین اہلِ فتویٰ سے معلوم کرکے خروج کرے۔ دعوت و تبلیغ میں وقت لگانے کے ساتھ ساتھ  علماءِ کرام و مفتیان عظام سے جوڑ رکھنا چاہیے، اور  درپیش مسائل میں ان سے رجوع کرتے رہنا چاہیے اور گھر والوں اور دیگر متعلقین کے حقوق کا خیال رکھ کر نکلنا چاہیے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144202200612

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں