بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

22 ذو الحجة 1442ھ 02 اگست 2021 ء

دارالافتاء

 

مردوں کے لیے سینے اور ٹانگوں کے بال کاٹنے کا حکم


سوال

کیا مرد اپنے ٹانگوں اور سینے  کے بال کا ٹ سکتا ہے؟

جواب

مرد وں کے لیے سینے اور ہاتھ  پاؤں کے بال کاٹنے کی گنجائش ہے، تاہم   ایسا کرنا خلافِ ادب ہے۔

فتاوی ہندیہ میں ہے:

"وفي حلق شعر الصدر والظهر ترك الأدب، كذا في القنية".

(كتاب الكراهية، الباب التاسع عشر في الختان والخصاء وقلم الأظفار وقص الشارب وحلق الرأس وحلق المرأة شعرها ووصلها شعر غيرها، ٥ / ٣٥٨، ط: دار  الفكر)

  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144208200691

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں