بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو الحجة 1445ھ 21 جون 2024 ء

دارالافتاء

 

مرد کے ہوتے ہوئے عورت کا دعا کروانے کا حکم


سوال

کیا عورت مرد کے ہوتے ہوئے دعا کراسکتی ہے؟

جواب

کسی مجلس میں مرد کی موجودگی میں بہتر یہی ہے کہ مرد دعا کروائے، البتہ اگر مجلس میں موجود مرد اس عورت کے محارم ہوں تو عورت کے لیے بھی جہرًا دعا کروانے میں کوئی حرج نہیں ہے، لیکن اگر مجلس میں کوئی غیر محرم مرد موجود ہو تو عورت کو جہرًا دعا نہیں کرانی چاہیے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144110200462

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں