بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 محرم 1446ھ 16 جولائی 2024 ء

دارالافتاء

 

لیکیوریا میں غسل کا حکم


سوال

مجھے احتلام کا شک ہوتا ہے ،میں جب بھی صبح اٹھتی ہوں  مجھے یاد نہیں ہوتا ،خواب دیکھا ہے یا نہیں ؟اور وہم  ہوتا ہے کہ میں نے خواب دیکھا ہے ،لیکن  چھوٹے چھوٹے وائٹ کلر کے داغ شلوار پر ہوتے ہیں ،جس کی وجہ سے میں روز غسل کر لیتی ہوں ،دن میں جتنی بار سوتی  ہوں   مجھے شک ہوتا ہے احتلام ہوا ہے یا نہیں، مجھے تھوڑا تھوڑا لیکوریا بھی ہو تا ہے ،میں نے یہ پوچھنا تھا صرف وہم کی وجہ سے میں غسل کروں یا نہ کروں ؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں  سائلہ محض وہم کی وجہ سے غسل نہ کرے،کیوں کہ چھوٹے چھوٹے وائٹ کلر کے داغ شلوار پر لگنے سے غسل واجب نہیں ہوگا،وہ منی نہیں ہے۔

فتاوی شامی  میں ہے:

"(قوله: منيا أو مذيا) اعلم أن هذه المسألة على أربعة عشر وجها؛ لأنه إما أن يعلم أنه مني أو مذي أو ودي أو شك في الأولين أو في الطرفين أو في الأخيرين أو في الثلاثة، وعلى كل إما أن يتذكر احتلاما أو لا فيجب الغسل اتفاقا في سبع صور منها وهي ما إذا علم أنه مذي، أو شك في الأولين أو في الطرفين أو في الأخيرين أو في الثلاثة مع تذكر الاحتلام فيها، أو علم أنه مني مطلقا، ولا يجب اتفاقا فيما إذا علم أنه ودي مطلقا، وفيما إذا علم أنه مذي أو شك في الأخيرين مع عدم تذكر الاحتلام؛ ويجب عندهما فيما إذا شك في الأولين أو في الطرفين أو في الثلاثة احتياطا، ولا يجب عند أبي يوسف للشك في وجود الموجب، واعلم أن صاحب البحر ذكر اثنتي عشرة صورة وزدت الشك في الثلاثة تذكر أولا أخذا من عبارته".

(کتاب الطہارۃ ،باب الغسل ،ج:1،ص:163،ط:سعید)

ہدایۃ میں ہے:

"والمعاني الموجبة للغسل إنزال المني على وجه الدفق والشهوة من الرجل والمرأة حالة ‌النوم ‌واليقظة۔"

(کتاب الطہارۃ ،باب فی الغسل،ج:1،ص:19،ط:دار احیاء التراث )

تبیین الحقائق میں ہے:

"ومني ‌المرأة رقيق أصفر۔"

(کتاب الطہارۃ ،باب الغسل ،ج:1،ص:17،ط:دار الکتاب الاسلامی)

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144511101202

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں