بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

2 ذو الحجة 1443ھ 02 جولائی 2022 ء

دارالافتاء

 

لمپی بیماری والے جانور کی قربانی کا حکم


سوال

 ایک شخص  قربانی کے لئے جانور لایا اس میں اس کے والدین شریک ہیں، اب اس جانور کو لمپی کی وبائی بیماری لگ چکی ہے، اس جانور کی قربانی کرنے کا اس کا دل نہیں مان رہا ، دوسرے جانور کی گنجائش بھی نہیں ہے، اگر اس کو بیچتے ہیں تو قربانی کے بعد کیا فروخت ہو سکتا ہے؟ جبکہ قربانی کی نیت سے اس کو لائے تھے ،آیا اس شخص کے لئے دوسرا جانور خریدنا ضروری ہے؟ جبکہ مذکوره بیماری کی وجہ سے اس کی قربانی نہیں کرنا چا رہا ۔

جواب

واضح رہے کہ ”لمپی“ بیماری جو کہ جانور کی جلد میں لگتی ہے، اس بیماری کی وجہ سے جانور معیوب (عیب والا) ہوجاتا ہے، اس لئے ایسے جانور کی قربانی جائز نہیں، البتہ اگر کسی نے جانور خرید لیا اور اس کے بعد اس کو بیماری لگ گئی ہو پھر صاحبِ استطاعت شخص جس پر قربانی واجب ہے،  اس  پر اس کی جگہ دوسرا جانور لے کر قربانی کرنا ضروری ہوگا، اگر استطاعت نہ ہو تو پھر اسی جانور کو ذبح کرنا کافی ہوگا۔

لہذا صورتِ مسئولہ میں اگر اِن صاحب اور ان کے والدین پر قربانی واجب تھی تو پھر ان کے لئے ضروری ہے کہ قربانی کے لئے دوسرا جانور لیں یا کم از کم ہر فرد ایک حصہ لے لے، اور اگر ان پر قربانی واجب نہیں تھی تو پھربہر صورت(چاہے بیماری پہلے سے تھی یا خریدنے کے بعد لگی) اسی جانور کو قربان کرسکتے ہیں۔ نیز  پہلی صورت میں (قربانی واجب ہونے کی صورت میں) قربانی کے بعد یا پہلے اس جانور کو بیچنا چاہیں تو بیچ سکتے ہیں۔

فتاویٰ ہندیہ میں ہے:

"(وأما صفته) : فهو أن يكون سليما من العيوب الفاحشة، كذا في البدائع."

(الفتاوى الهندية، كتاب الأضحية، الباب الخامس في بيان محل إقامة الواجب، 297/5، رشيدية)

الدر المختار ميں هے:

"(ولو) (اشتراها سليمة ‌ثم ‌تعيبت ‌بعيب مانع) كما مر (فعليه إقامة غيرها مقامها إن) كان (غنيا، وإن) كان (فقيرا أجزأه ذلك) وكذا لو كانت معيبة وقت الشراء لعدم وجوبها عليه بخلاف الغني."

(الدر المختار مع ردالمحتار،كتاب الأضحية، 325/6، سعيد)

فقط والله اعلم


فتوی نمبر : 144311100867

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں