بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 ستمبر 2020 ء

دارالافتاء

 

لیز شدہ زمین پر بنی بلڈنگ کی فروخت کا حکم


سوال

میں یہ جاننا چاہتاہوں کہ اگرآپ نے کوئی زمین لیزپرلی99 سال کے لیے اور اس پرآپ نے بلڈنگ تعمیر کی ، کیا اس بلڈنگ کوزیادہ قیمت پرفروخت کیا جاسکتاہے؟ مثلاً آپ نے زمین 50٫000٫00 کی خریدی اوراس پر 50٫000٫00 کی لاگت سے بلڈنگ تعمیر کی، کیا اس بلڈنگ کو ایک کروڑ یا زیادہ پر فروخت کیا جاسکتاہے؟

جواب

مروجہ طریقہ کے مطابق لیز پر لی گئی زمین پربلڈنگ تعمیر کرنا اوراسے اضافی قیمت پرفروخت کرنا جائز ہے، شرعاً کوئی ممانعت نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143101200430

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں