بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 رجب 1444ھ 28 جنوری 2023 ء

دارالافتاء

 

لینہ ، لینا نام رکھنے کا حکم


سوال

 "لینا" نام کی شرعی حیثیت کیا ہے؟  میں نے اپنی بیٹی کا نام ”لینا“  رکھا ہے؛ کیوں کہ  میرے علم کے مطابق یہ ایک صحابیہ کا نام ہے جس کے معنی ہیں: نرم و نازک، خوب صورت۔

جواب

مذکورہ نام ”لینہ“ (لِيْنَه) ہے، آخر میں گول ”ۃ“ ہے، جو وقف میں ساکن ہوکر ”ہ“ پڑھی جائے گی، یہ الف کے ساتھ  نہیں ہے، نیز یہ ”لین“ سے ہے جس کے معنی نرم وملائم کے ہیں،   یہ  صحابیہ کے ناموں میں سے  ہے؛ اس لیے یہ نام رکھنا جائز ہے۔

الإصابة في تمييز الصحابة (8 / 308):

"11735- لينة:

حديثها في جزء بن ديزيل الصغير.

11736- لينة:

صاحبة مكان  قباء. أخرج عمر بن شبّة في أخبار المدينة بسند صحيح إلى عروة، قال: كان موضع مسجد قباء لامرأة يقال لها لينة، كانت تربط حمارا لها، فابتنى فيه سعد بن خيثمة مسجدا، فقال أهل مسجد الضرار: أنحن نصلّي في مربط حمار لينة، لا، لعمر اللَّه، لكنا نبني مسجدا فنصلي فيه إلى أن يجيء أبو عامر فيؤمنا فيه، فأنزل اللَّه تعالى: وَالَّذِينَ اتَّخَذُوا مَسْجِداً ضِراراً ... [التوبة: 107] الآية".

فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144205200346

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں